Mission

سرکاری اداروں کی نگرانی،عوامی شعورکی بیداری، اینٹی کرپشن کی قانونی اصلاحات کیلئے وکالت اورکرپشن کی مزمت کے ذریعے سےمعاشرے کے قانونی، سماجی اورمالی طورپرمظلوم طبقات کومضبوط کرکےخوف کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔

Vision

پاکستان کو کرپشن سے پاک کرکے ترقی کی راہ پر گامزن کرنا چاہتےہیں۔

Objective

باہمی تعاون پر مبنی ایک سماجی نظام تیار کرنا جہاں ہر شخص خود کو محفوظ محسوس کرے اور انصاف تک رسائی آسان ہو۔

Chairman

Mirza Asad Ali Baig

  • Chairman Anti-Corruption Anti-Crime Forum Pakistan
  • Former Vice chairman NPCIH-Government of Pakistan
  • Chairman ART a project of Government of Pakistan
  • Chairman Nest (Rehabilitation of slums)
  • Former member HRF
  • Chairman Green Heaven Society
  • Chief Executive Ikhwa Builders & Developers
  • Architectural & Development Consultant

Story of ACACF

ایک سماجی کارکن کے طور پر متاثرین کے دل دہلا دینے والے واقعات کا ازالہ کرتے ہوئے کرپشن کے خلاف ایک عملی اور نطریاتی تنظیم کی بنیاد رکھنے تک کا سفر ۔اینٹی کرپشن اینٹی کرائم فورم پاکستان کی بنیاد مرزا اسد علی بیگ صاحب نے رکھی جو کہ ایک طویل عرصے سے کاروبار کے علاوہ اپنا زیادہ تروقت سماجی خدمت میں صرف کیا کرتے تھے ۔آپکو اللہ نے وسیع جلقہ، بہترین تعلْقات اور محکموں میں اچھی پہچان دی تھی ۔ پورے پاکستان سے لوگ اپنی پریشانیاں لاتے اور آپ اپنی استعطاط اور وسائل کے مطابق سب کے مسلئے حل کرا دیا کرتے تھے۔ ایسے میں انکے سامنے ایک پریشان کن واقعہ پیش آیا جو معاشرے کیلئے بھی قابل غور تھا اور اسی سے اینٹی کرپشن اینٹی کرائم فورم جیسے پلیٹ فارم کیلئے کام کرنے کی سوچ بیدار ہوئی۔

واقعہ یوں ہے کہ ایک شخص ان کے پاس آیا اور کہنے لگا میری مدد کی جائے، میرے پاس کچھ نہیں بچا، اور کئی دن سے اپنے گھر سے بے گھر پولیس سے چھپتا پھر رہا ہوں۔ میرا کوئی بیٹا نہیں ہے،صرف ایک بیٹی اور بیوی ہیں جو اس وقت گھر پر تنہا ہیں۔ پولیس نے مجھ پرکئی تھانوں میں پرچے دئیے ہوئے ہیں اور مجھے تلاش کرنے کی غرض سے بار بار گھر پر چھاپے مار کر میری بیٹی اور بیوی کو خوفزدہ کر رہی ہے۔

میں مدد حاصل کرنے کیلئے بہت سے لوگوں کے پاس گیا،انسانی حقوق میں کام کرنے والی بہت سی تنظیموں کے پاس گیا،میڈیا کے پاس گیا۔مگر کسی نے میری مدد نا کی کیوں کہ میرے پاس انہیں دینے کیلئے پیسے نہیں تھے۔مجھے کہنے لگا کہ آپکا تعارف سنا تو مددلینے کیلئے آگیا، میرے پاس پیسے نہیں ہیں،اس شخص کی حالت سے صاف ضاہر تھا کہ وہ کھانے پینے کے اخراجات کرنے سے بھی تنگ ہو چکا ہے۔

مزید اس نے یہ بتایا کہ میں اربوں روپے کی پراپرٹی کا مالک ہوں۔، اور اس پراپرٹی کو چھیننے کے لئے ایک با اثر شخص جو میراواقف تھا، اس نے جبرن مجھ سے پراپرٹی کے کے کاغزات پر سائن کر وائے اور کچھ ایسے ڈاکومینٹس پر بھی سائن کر وائے جس سے ریوینو رکارڈ میں گڑ بڑ کی جا سکے۔۔۔۔۔۔۔۔ کہنے لگا کے کیونکہ مجھ سے گن پوئنٹ پریہ سائن کر وائے گئے تھے،اس لئے ا نکا ر نہیں کر سکتا تھا،وہ مخالف شخص ایک معروف تنضیم کا رکن اور بااثر شخص ہے۔پولیس کے بڑے بڑے افسر،تحصیلدار،پٹواری یہ سب اسکے ساتھ ملے ہوئے ہیں اور اس سارے معاملے میں اسکو سپورٹ کر رہے ہیں۔اس نے مختلف تھانوں میں میرے خلاف جھوٹے مقدمات بنا کر پرچے کرا دئے ہیں۔

اب میں اپنی پراپرٹی بچانا تو دور کی بات بھاگتا پھر رہا ہوں چھپتا پھر رہا ہوں اور انکی کوشش ہے کہ مجھے جیل بھیج دیں، میرے خلاف کافی تھانوں میں پرچے ہیں، اور میں تھا نا کچہری سے بلکل واقف نہیں ہوں۔ میں جب جیل چلا جاؤں گا،تو پتا نہیں میرا کیا بنے گا۔میں باہر آ بھی سکوں گا کے نہیں ساری زندگی مجھے جیل میں گزارنی پڑے گی۔پیچھے میری بیوی اور بیٹی ہیں، پتا نہیں انکے ساتھ کیا سلوک کریں گے۔

اس نے بتایا کہ میں اس وقت اخراجات سے بھی سخت پریشان ہوں نہ بنک جا سکتا ہوں نا ہی اپنے کاروبار پے جا سکتا ہوں جس کی وجہ سے میرے گھر میں بھی فاقوں کے حالات پیدا ہو گئے ہیں میں انتہائی مشکل حالات میں ہوں۔

پھر اسکی ساری کہانی سنے کے بعد اللہ نے جو مجھے عزت اور تعلقات دئے تھے اسکے بنیاد پر میں نے اسکے پرچے خارج کرائے،جالی سائن کے زریعہ اسکا جو رکارڈ گڑبڑ کر دیا تھا اسکو بحال کر وایا۔وکیل کے خرچے کئے ر،رہائش کے بھاگنے دوڑنے کے کھانے پینے کے،اور تقریبن اسکو ڈیڑھ ماہ لگا تب وہ اس قابل ہوا کہ اس سارے معاملات سے اس کی جان بچی۔

میں حیران ہوں کہ ایک اربوں روپے کی پراپرٹی کا مالک جس کے کھانے تک کا انتظام مجھے کرنا پڑا اس واقعہ نے مجھے حلا کر رکھ دیا
ایک طرف کرپشن کا یہ نظام ہے کہ کرمنلز اور سرکاری افسران کا مضبوط گٹھ جوڑ اوردوسری طرف اس نظام سے متاثر ہونے والا ارب پتی شخص بھی ایسے حالات میں آجاتا ہے کہ شائدذلت کے ساتھ ساری عمر جیل میں گزارنی پڑے اسکے بیوی بچے روڈ پر بھیگ مانگنے پر مجبور ہوجائیں، اور اسکی عائندہ نسل تبہ ہو جائے۔۔۔۔ اور انکو سپورٹ کرنے والا کائی ادارہ نظر نہیں آتا۔

اس کے بعد مجھے سمجھ آئی کہ کوئی ایساپلیٹ فارم ہونا چاہئے، جو کرپشن کو ہاتھ ڈالے،جس میں کرپشن سے متاثر ہونے والے لوگوں کیلئے بر وقت قانونی،سماجی مالی تعاون کا انتظام موجود ہو، چیریٹی فنڈ کا انتظام موجود ہو اور اس وقت جب وہ ڈسٹرب ہیں انکے تمام قسم کے اخراجات فراہم کئے جائیں کم از کم جتنے لوگ ہم بچا سکتے ہیں ان کو بچا لیں۔

Philosophy – Helping the Oppressed

مظلوم کی مدد۔۔۔۔۔۔۔۔رسول اللہﷺ کی خواہش
اینٹی کرپشن اینٹی کرائم فورم پاکستان ایک غیر سرکاری تنظیم ہے جس کی بنیاد 2000 میں مظلوموں کی مدد کیلئے رسول اللہﷺ کے اس واقع کی بنیاد پر رکھی جس میں ایک تاجر نے مکہ میں تجارت کی غرض سے اپنا مال لا کر مکہ کے ایک تاجر کو دیا۔ مقامی تاجر نے اسے تنہا اور پردیسی پا کر اسکا مال بھی رکھ لیا اور اس کی قیمت بھی غصب کر لی۔ پردیسی تاجر بہت پریشان ہواروتا پیٹتا کچھ مقامی لوگوں کے پاس گیااور اپنی پریشانی کا احوال سنایا۔مکہ کے اہل خیر نے جب تاجر پر ہونے والے ظلم کی کہانی سنی تو اپنے حلقہ کے لوگوں سے حلف لیا کہ ہم مظلوم کا ساتھ دیں گے اور ظالم کے خلاف متحد ہو کر ظلم ختم کریں گے۔نبی ﷺ قبل نبوت اس معاہدے میں شریک تھے۔یہ حلف آپکو اتنا عزیز تھا کہ آپ نے فتح مکہ کے بعد بھی اس واقعہ کو یاد فرمایا کہ اب بھی مجھ سے کوئی ایسا حلف یا معاہدہ کرنا چاہے تو میں اسے پسند کروں گا۔

Pillars

1.Transparency (شفافیت)
2. Integrity (دیانتداری)
3.Solidarity (یکجہتی)
4. Courage (ہمت)
5. Justice (انصاف)
6. Democracy (جمہوریت)

Programs

Principles


ACACF

The Worlds First anti corruption organization
that rescues the victims of corruption
and crime through charity.

Copyright © 2022 – Anit Corruption Anti Crime Forum.

Contact Us

Near High Court Lahore , Pakistan

+92 3040462864